اسکول کھولنے کا فیصلہ نہیں ہوا: وزیر تعلیم سندھ

(آئی این این نیوز)

کراچی: وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے کہا ہےکہ اسکول واحد جگہ ہوگی جو ہم سب سے آخر میں کھولیں گے۔

جیونیوز کے مطابق ایک بیان میں سعید غنی کا کہنا تھا کہ اسکولوں کے کھولنے سے متعلق ابھی فیصلہ نہیں ہوا ہے، اس صورت حال میں اگر ہم اسکول کھول بھی دیں تو والدین بچوں کو نہیں بھیجیں گے۔

انہوں نےکہا کہ اسکول واحد جگہ ہوگی جو ہم سب سے آخر میں کھولیں گے۔

دوسری جانب ٹرانسپورٹ کھولنے سے متعلق سعید غنی کا کہنا تھا کہ ٹرانسپورٹ کے حوالے سے بات چل رہی ہے اور اسے ایس او پیز کے ساتھ کھول دیا جائے گا۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز محکمہ داخلہ سندھ نے صوبے میں لاک ڈاؤن 30 جون تک بڑھادیا تھا اور اس حوالے سے نیا حکم نامہ جاری کر دیا ہے۔

محکمہ داخلہ سندھ کے مطابق نیشنل کوآرڈینیشن کمیٹی کے فیصلوں کی روشنی میں حکومت سندھ نے فیصلہ کیاہے کہ تمام تعلیمی و تربیتی ادارے، شادی ہالز ،بزنس سینٹر اور ایکسپو ہالز بدستور بند رہیں گے۔

نوٹیفکیشن کے مطابق کھیلوں کی تمام سرگرمیاں ان ڈور اور آؤٹ ڈور اسپورٹس سمیت جِم اور کلبس بھی بند رہیں گے۔

اس کے علاوہ ہر قسم کے ریسٹورنٹ اور کیفے بند رہیں گے تاہم خرید کر گھر لے جانے اور ہوم ڈیلیوری کی اجازت ہوگی جب کہ سیاحوں کے لیے ہوٹلز بھی بند رہیں گے۔

محکمہ داخلہ سندھ کے مطابق تمام تفریحی مقامات ، پارکس،سنیما اور تھیٹر بند رہیں گے جب کہ بیوٹی پارلرز کو بھی کھولنے کی اجازت نہیں ہے۔

اعلامیے کے مطابق صوبے میں ہر قسم کے اجتماعات، جلوس، مزارات پر کسی بھی تقریب پر تا حکم ثانی پابندی ہوگی