سرکاری چینل نے اربوں ٹیکس وصول کیا، شاہکار ڈرامہ نہ بنا سکا : شان شاہد

(آئی این این نیوز)

پاکستانی فلم اسٹار شان شاہد نے سرکاری چینل کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ گزشتہ 25 برسوں سے سرکاری ٹی وی چینل نے عوام سے اربوں روپے کا ٹیکس وصول کیا لیکن کوئی بھی شاہکار ڈرامہ نہیں بنا سکا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر شان شاہد تُرک سیریز ’ارطغرل غازی‘ کو سرکاری چینل پر نشر کرنے کے سب سے پہلے مخالف کے طور پر سامنے آئے  اور صارفین کی تنقید کا نشانہ بنے تھے۔

حالیہ سوشل میڈیا پیغام میں شان کی جانب سے مذکورہ ترکش سیریز کو کلاسک ماسٹر پیس قرار دینے پر وہی سوشل میڈیا صارفین حیران رہ گئے اور مزاحیہ تبصرے کرنے لگے۔

اب اپنے ایک وضاحتی پیغام میں شان نے اپنی بات دہراتے ہوئے کہا کہ وہ غیر ملکی مواد کے پاکستان میں نشر کرنے کے مخالف نہیں بلکہ سرکاری چینل پر نشر کرنے پر معترض ہیں۔

شان شاہد نے اپنے وضاحتی پیغام میں لکھا کہ ’ارطغرل غازی‘ کی تعریف میں کی گئی ٹوئٹ کو غلط سمجھا گیا ہے، اداکار نے لکھا کہ انہوں نے جو پہلے ڈرامے کے خلاف ٹوئٹ کی تھیں وہ ڈرامے کے خلاف نہیں بلکہ اسے سرکاری ٹی وی چینل پر نشر کرنے کی مخالفت میں تھیں۔

اداکار نے لکھا کہ سرکاری ٹی وی نے گزشتہ 25 برس سے عوام سے اربوں روپے کا ٹیکس وصول کیا مگر کوئی بھی ایسا مواد نہیں پیش کرسکی جس پر ہمیں فخر ہو۔

شان نے ایک بار پھر کہا کہ وہ نہ تو ڈرامے کے پہلے مخالف تھے اور نہ اب ہیں مگر اسے سرکاری ٹی وی پر نشر کرنے کے ضرور مخالف ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سرکاری چینل پر اپنے ملک کے نظریے اور ہیروز  کے فروغ سمیت دیگر بھاری ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں جو وہ اب تک پوری کرنے میں بُری طرح ناکام ہے۔

اداکار نے کہا کہ ماضی میں نجی چینلز غیر ملکی مواد نشر کرتے آئے ہیں لیکن انہوں نے کبھی اس کی مخالفت نہیں کی نہ کریں گے، مسئلہ صرف سرکاری چینل پر دوسرے ملک کی پروڈکشن نشر کرنے سے ہے۔

 انہوں نے تنقید کرنے والوں کے حوالے سے لکھا کہ یہ واضح ہوچکا ہے کہ ہم سب نفرت، تنقید اور دوسروں پر ملامت کرنے کی بیماری میں مبتلا ہوچکے ہیں۔

واضح رہے کہ شان کے ’ارطغرل غازی‘ کو سرکاری چینل پر نشر نہ کرنے کے مطالبے پر انہیں ساتھی اداکاروں سمیت سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا جس کے بعد ایک تنازع کی صورتحال پیدا ہوگئی تھی اور سوشل میڈیا صارفین سمیت مشہور شخصیات نے بھی اداکار کے اس بیان کی مذمت کی تھی۔