ٹونٹی 20 ورلڈ کپ ہوا تو پاکستان کے جیتنے کے امکانات بہت زیادہ ہیں،شعیب ملک

(آئی این این نیوز)

اسلام آباد

 قومی کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز آل راؤنڈر شعیب ملک نے کہا کہ پاک بھارت کرکٹ تعلقات کو دوبارہ شروع کرنے کی ضرورت ہے جس طرح عالمی کرکٹ کو ایشز کی ضرورت تھی، دونوں سیریز ایک ہی جذبے کے ساتھ کھیلی گئیں اور ان کی ایک عظیم تاریخ ہے۔ اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ کیا انگلینڈ اور آسٹریلیا ایشز سیریز کے بغیر ٹیسٹ کرکٹ کا تصور کرسکتے ہیں ۔دونوں سیریز ایک ہی طرح کے شوق سے کھیلی جاتی ہیں اور اس کی عمدہ تاریخ ہے لہذا یہ افسوس کی بات ہے کہ ہم ابھی نہیں کھیل رہے ہیں۔ اس کے علاوہ میرے پاکستانی دوست ہیں جو بھارتی کرکٹرز کے بارے میں احترام اور تعریف کے ساتھ بات کرنا پسند کرتے ہیں۔ اسی طرح جب ہم بھارت میں کھیلتے ہیں تو مجھے اور میرے پاکستانی ساتھی کھلاڑیوں کو بہت محبت دی جاتی ہے لہذا یہ کرکٹ کے ساتھ دشمنی ہے، میں دونوں ممالک کے درمیان کرکٹ کی جلد واپسی کے لئے پرامید ہوں۔
اگر اس سال کا ٹونٹی 20 ورلڈ کپ ہوتا ہے تو شعیب ملک نے کہا کہ پاکستان کے جیتنے کے امکانات بہت زیادہ ہیں. انہوں نے کہا کہ اس طرح کے ایونٹ جیتنے کے لیے مضبوط باؤلنگ کی ضرورت ہے اور مجھے لگتا ہے کہ اس میں ہم پورے ہیں۔ اس کے علاوہ ہمارے پاس مضبوط بولنگ اٹیک کے ساتھ ساتھ اچھے بلے باز بھی موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صرف یہی نہیں بلکہ ہماری فیلڈنگ میں بہتری آئی ہے ، جو بڑے گراونڈ میں اہم ہے۔ہماری فٹنس پچھلے سالوں کی نسبت بہت بہتر ہے لہذا مجموعی طور پر مجھے لگتا ہے کہ ہم ایک ٹیم کی حیثیت سے وہاں موجود ہوں گے جو آگے چلتی ہے تو یہ ٹورنامنٹ جیتنے کا ایک بہت اچھا موقع ہے۔ شعیب ملک نے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کی جانب سے ڈومیسٹک کرکٹ میں کی جانے والی تبدیلیوں کی بھی تعریف کی۔انہوں نے کہا کہ پی سی بی نے ڈومیسٹک کرکٹ میں چند بہت مثبت تبدیلیاں کی ہیں جیسے کم تعداد میں ایلیٹ ٹیموں کے ساتھ جانا اور کرکٹ کے معیار کو بہتر بنانا۔انہوں نے کہا کہ اصل چیز جس میں وہ تبدیلی دیکھنا چاہتے ہیں وہ نچلی سطح کی کرکٹ کو مزید تقویت دینا ہے خاص طور پر سکول ، کالج اور کلب کرکٹ کے معاملے میں پی سی بی کی طرف سے حالیہ برسوں میں پاکستان ٹیم کی فیلڈنگ اور فٹنس میں بہتری لانے کے لئے بہت اچھا کام کیا گیا ہے اور مجھے امید ہے کہ یہ پیشہ ورانہ صلاحیت مختلف سطحوں پر چلے گی۔