مفتی زرولی خان کا انتقال کورونا سے نہیں ہوا: قاری عثمان

(آئی این این نیوز)

کراچی: جمعیت علماء اسلام کے رہنما قاری محمد عثمان نے کہا ہے کہ مفتی زرولی خان کا انتقال کورونا سے نہیں ہوا، وہ گزشتہ 6 سال سے دمہ اور دل کے عارضے میں مبتلا تھے۔

قاری عثمان کے مطابق مفتی زرولی خان کو اتوار کی شام کو طبیعت خراب ہونےپر معمول کے چیک آپ کے لیے اسپتال لے جایا گیا تھاجہاں وہ 24 گھنٹے داخل رہنے کے بعد اللہ کو پیارے ہو گئے۔

واضح رہے کہ ترجمان انڈس اسپتال کے مطابق مفتی زر ولی کورونا کے سبب انڈس اسپتال میں زیر علاج تھے تاہم قاری محمد عثمان نے اس کی تردید کی ہے۔

شیخ الحدیث مفتی زر ولی خان جامعہ احسن العلوم کراچی کے مہتمم تھے۔

مفتی زر ولی خان پھپیڑوں کے عارضے میں مبتلا تھے اور کافی عرصے سے آکسیجن پر تھے۔

مولانا زر ولی خان 1953 میں جہانگیرہ میں پیدا ہوئے اور انہوں نے دینی تعلیم بنوری ٹاؤن سے حاصل کی جس کے بعد 1978 میں گلشن اقبال میں مدرسہ احسن العلوم کی بنیاد رکھی جو اب جامعہ احسن العلوم کے نام سے پہچانی جاتی ہے۔