پاکستان میں طالبان کے زیرِ استعمال ریڈیو اب کورونا کیخلاف جنگ میں برسرپیکار

دنیا بھر میں پھیلنے والےخطرناک کورونا وائرس سے متعلق آگاہی پھیلانے کے لیے مختلف ادا رے اور پلیٹ فارمز سرگرم ہیں اور  اس عالمگیر وبا سے نمٹنے کے لیے ہر کوئی اپنا اپنا حصہ ڈال رہا ہے۔

کسی زمانے میں پاکستان کے علاقے سوات میں طالبان کے زیر استعمال پختونخوا ریڈیو ایف ایم 98 بھی وائرس کے خلاف جنگ میں استعمال ہونے لگا ہے۔

طالبان کے زیر استعمال ریڈیو سوات میں پرو پیگنڈا اور لوگوں کو ڈرانے اور خوف و ہراس پھیلانے کے لیے استعمال ہوا تھا لیکن اب اس کا استعمال ایک فلاحی مقصد کے لیے ہو رہا ہے۔

پختونخوا ریڈیو ایف ایم 98 پاکستان کے شمالی دور دراز علاقوں کے رہائشیوں کو صحت کی دیکھ بھال سے معلومات فراہم کرنے کے لیے ‘آن ائیر کلینک’ کا انعقاد کر رہا ہے۔

اب یہ ریڈیو اپنی نشریات کے ذریعے عالمگیر وبا کے خلاف جنگ لڑتے ہوئے لوگوں کو کوورنا وائرس سے متعلق معلومات اور آگاہی پھیلا رہا ہے۔

پاکستان میں کورونا وائرس کی صورتحال

پاکستان میں کورونا وائرس سے ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 335 ہو گئی ہے جب کہ نئے کیسز سامنے آنے سے مصدقہ مریضوں کی تعداد 15289 تک جا پہنچی ہے۔