ٹرمپ کی بیٹی اور داماد نے قومی خزانے سے ایک لاکھ 44 ہزار ڈالر ٹوائلٹس میں بہا دیے

(آئی این این نیوز)

امریکا کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی بیٹی ایوانکا اور داماد کشنر پر قومی خزانے کو ایک لاکھ 44 ہزار ڈالر نقصان پہنچانے کے الزامات عائد کیے گئے ہیں۔

امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کی رپورٹ کے مطابق صدر ٹرمپ کی بیٹی ایوانکا اور داماد کشنر نے اپنی سیکیورٹی پر تعینات خفیہ ایجنٹس کو اپنے پرتعیش گھر میں بنیادی انسانی ضرورت واش روم استعمال نہیں کرنے دیا۔

رپورٹ کے مطابق جیئرڈ کشنر نے واشنگٹن ڈ ی سی میں 2017 میں 5 ہزار مربع فٹ کا پرتعیش مکان کرائے پر لیا جس میں چھ بڑے اور ایک چھوٹا ٹوائلٹ تھا لیکن ایوانکا اور کشنر نے خفیہ ایجنٹس کو ٹوائلٹس استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی، مجبورا ایجنٹس فٹ پاتھ، ہوٹلوں کے ٹوائلٹس، پبلک ٹوائلٹس اور قریبی مقامات استعمال کرتے رہے۔

واشنگٹن پوسٹ کے مطابق ہمسایوں نے شکایت کی تو ایجنٹس سابق صدر اوباما کے گیراج کا ٹوائلٹ استعمال کرتے رہے تاہم بعد میں ایوانکا اور کشنر کے مکان کے قریب سڑک پار ایک اسٹوڈیو اپارٹمنٹ تین ہزار ڈالر ماہانہ کرائے پر مل گیا، اس طرح 2017 سے اب تک ایک لاکھ 44 ہزار ڈالر یعنی 23 کروڑ پاکستانی روپے سے زائد صرف سیکرٹ ایجنٹس کے ٹوائلٹس پر خرچ کر دیے گئے، یہ رقم امریکی ٹیکس دہندگان کی جیب سے ادا کی گئی۔

دوسری جانب ترجمان وائٹ ہاؤس نے خبر کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ خفیہ ایجنٹس کو باتھ روم استعمال کرنے سے نہیں روکا گیا۔