خواجہ آصف کو عدالتی ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا

(آئی این این نیوز)

لاہور: احتساب عدالت نے مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما خواجہ آصف کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

لاہور کی احتساب عدالت میں مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ آصف کے خلاف آمدن سے زائد اثاثوں کے کیس کی سماعت ہوئی جس سلسلے میں نیب نے خواجہ آصف کو عدالت میں پیش کیا، اس موقع پر لیگی کارکنان کی بڑی تعداد بھی عدالت کے باہر جمع تھی۔

احتساب عدالت کے جج جواد الحسن نے کیس پر سماعت کی اور دورانِ سماعت نیب نے عدالت سے خواجہ آصف کے مزید 15 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ ملزم سے آمدن سے زائد اثاثوں کی تحقیقات مکمل کرنی ہیں۔

نیب کی استدعا پر خواجہ آصف کے وکیل نے مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ نیب تفتیش مکمل کر چکا ہے اور سارا ریکارڈ پہلے ہی نیب کے پاس ہے جب کہ سپریم کورٹ خواجہ آصف کے بیرون ملک ملازمت سےمتعلق کلیئرکر چکی ہے، کیس سپریم کورٹ تک گیا اور سپریم کورٹ نے خواجہ آصف کو کلئیر کیا۔

اس موقع پر نیب کے پراسیکیوٹر نے کہا کہ خواجہ آصف نے بیرون ملک ایک ریسٹورنٹ بھی بنا رکھا ہے، خواجہ آصف نے بتایا کہ تنخواہ اور ریسٹورنٹ کی آمدنی 136 ملین ہے، ان کے ذاتی اکاؤنٹس میں بھی کروڑوں روپےجمع ہوئے۔

عدالت نے خواجہ آصف اور نیب پراسیکیوٹر کے دلائل پر فیصلہ محفوظ کیا جو کچھ دیر بعد سناتے ہوئے نیب کی استدعا مسترد کردی۔

عدالت نے خواجہ آصف کو 14 روز کے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔